لگتا ہے مولانا کیساتھ ہاتھ ہوگیا: تجزیہ کار

کراچی:سینئر تجزیہ کاروں شہزاد اقبال، مظہر عباس، سلیم صافی اور حامد میر نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کی جانب سے اسلام آباد میں آزادی مارچ ختم کرنے کے اعلان پرجیو نیوز پر اپنا تجزیہ دیا۔

 سینئر تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اسلام آباد سے واپسی مولانا فضل الرحمان کے سیاسی سفرکی واپسی ہے اور لگ یہ رہا ہے کہ ان کے ساتھ کوئی بڑا ہاتھ ہوگیا ہے۔تجزیہ کاروں کا کہنا تھا کہ جے یو آئی ایف کے اس اقدام سے حکومت کو کافی فائدہ پہنچے گا اور اپوزیشن کیلئے آئندہ کوئی تحریک چلانا مشکل ہوجائے گا، مولانا کے پلان بی سے مطالبات تو پورے نہیں ہوسکتے لیکن ایک سیاسی افراتفری ضرور مچ سکتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ جب یہ دھرنا ختم ہوگیا تو پھر بے شک وہ جلسے بھی کریں اور جلوس بھی نکالیں لیکن اسکے اثرات وہ نہیں رہتے، بیسٹ پلان تو پلان اے ہی ہوتا ہے اب اگر ان کو اس میں استعفے والی کامیابی نہیں ملی تومجھے لگتا ہے پلان بی ، سی اور ڈی میں بھی یہ نہیں ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں