آزاد کشمیر ہائی کورٹ نے الیکشن کمیشن کا اہم فیصلہ کالعدم قرار دیدیا

آزاد کشمیر ہائی کورٹ نے الیکشن کمیشن کی جانب سے تقرریوں اور تبادلوں پر عائد پابندی ختم کرنے کا حکم دے دیا۔

آزاد جموں و کشمیر کے الیکشن کمیشن نے انتخابی ضابطہ اخلاق کے تحت سرکاری ملازمین کی تقرریوں اور تبادلوں پر پابندی عائد کی تھی، بلدیاتی و ترقیاتی اداروں میں تعینات سیاسی شخصیات کو فارغ کرنے کی ہدایات جاری کی گئی تھیں۔

الیکشن کمیشن کی ہدایت پر آزاد کشمیر حکومت نے ایسے تمام افراد کو فارغ کر دیا تھا۔

الیکشن کمیشن کے فیصلے کو آزاد کشمیر ہائیکورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا اور کمیشن کے فیصلے کو کالعدم قرار دینے کے لیے عدالت میں درخواست دائر کی گئی تھی۔

اب آزاد کشمیر ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کی جانب سے تقرریوں اور تبادلوں پر عائد پابندی ختم کرتے ہوئے کہا ہے کہ تقرریوں اور تبادلوں پر پابندی اختیارات سے تجاوز اور حکومتی اختیار میں مداخلت ہے۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کے لیے مشاورت شروع کر دی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں