ایران:نوجوانوں کیلئےسرکاری ڈیٹنگ ایپ متعارف

ایران میں نوجوانوں کو شادی کی ترغیب دینے کےلیے سرکاری ڈیٹنگ ایپ متعارف کرادی گئی۔

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق ایران کی سرکاری ڈیٹنگ ایپ کا نام ہمدان ہے جس کو حکومتی تنظیم طبیان کلچر انسٹی ٹیوٹ نے تیار کیا ہے۔ فارسی زبان میں ہمدان کا مطلب ہے ’ساتھی‘ کے ہوتے ہیں۔

ایران میں کئی ڈیٹنگ ایپس موجود ہیں تاہم ہمدان پہلی سرکاری ڈیٹنگ ایپ ہے، ایرانی قانون کے مطابق شادی کے بغیرجنسی تعلق بنانا جرم ہے۔

ایپ تیار کرنے والوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ایپ مصنوعی ذہانت کے ذریعے غیرشادی شدہ مردوں کےلیے مستقل لیکن صرف ایک شادی کے لیےموزوں رشتہ تلاش کرتی ہے۔

ہمدان ایپ کے مطابق کسی بھی صارف کو رجسٹریشن سے پہلے اپنی شناخت کی تصدیق کرانا لازم ہے۔ اس کے علاوہ صارف کا نفسیاتی ٹیسٹ ہو گا جس کے بعد ہی وہ اپنے ساتھی کی تلاش شروع کر سکتا ہے۔

جب مناسب میچ مل جاتا ہے تو ایپ دونوں خاندانوں کو سروس معاونین کی موجودگی میں متعارف کراتی ہے جو چار برسوں تک نئے شادی شدہ جوڑے کے ساتھ موجود رہیں گے۔

ایران کی نیشنل آرگنائزیشن فار سول رجسٹریشن کے اعداد و شمار کے مطابق ایران میں مارچ 2020 سے دسمبر تک 3لاکھ 73 ہزار شادیاں ہوئیں جبکہ 99ہزار 600 طلاقیں رپورٹ ہوئیں۔ ایران میں 2008 میں ہر 8 شادیوں میں سے ایک طلاق پر ختم ہورہی تھی۔ ایران میں 2020 میں سالانہ شرح پیدائش1.29 فیصد تک گر چکی ہے۔

یاد رہے کہ ایران کی کل آبادی کا آدھا حصہ 35 سال سے کم عمر ہے۔

حکومت نے خبردار کیا ہے کہ اگر کوئی قدم نہ اٹھایا گیا تو ایران اگلے 30 برسوں میں دنیا کا سب سے عمر رسیدہ لوگوں کا ملک بن جائے گا۔

واضح رہے کہ ایران کی پارلیمنٹ نے رواں برس مارچ میں ایک ایسا قانون منظور کیا تھا جس میں نوجوانوں کو شادی کی ترغیب اور دو سے زیادہ بچے پیدا کرنے والوں کو مالی مراعات دینے کی منظوری دی گئی تھی۔ ایران کی گارڈین کونسل نے تاہم ابھی تک اس قانون کی منظوری نہیں دی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں