کوٹ رادھاکشن واقعے کےگواہان کی جان کو خطرہ

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے کوٹ رادھاکشن واقعے کےگواہان کی جان کوخطرات کے پیش نظر سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں فول پروف سیکیورٹی فراہم کرنے کی ہدایت کردی۔

تفصیلات کے مطابق کوٹ رادھاکشن واقعے کے گواہان کو سیکیورٹی مہیانہ کرنےکے خلاف لاہورہائیکورٹ میں درخواست کی سماعت ہوئی تو قائم مقام چیف جسٹس نے گواہان کو مناسب سیکیورٹی مہیا نہ کرنےپر سخت اظہار برہمی کیا۔ہائیکورٹ کی جانب سے سیکرٹری داخلہ اورآئی جی پنجاب کومراسلہ جاری کیا گیا جس میں گواہان کوسپریم کورٹ کی ہدایات کےمطابق سیکیورٹی فراہم جاری کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔مراسلہ کے مطابق کوٹ رادھا کشن واقعے کا ٹرائل اےٹی سی میں زیرسماعت ہے لہذا گواہان کی مکمل اورفول پروف سیکیورٹی کو یقینی بنایا جائے۔مراسلہ میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ نے کوٹ رادھا کشن واقعے کے گواہان اور متعلقہ افرادکو سیکیورٹی فراہمی کی ہدایت کی تھی۔یاد رہے 2014 میں رادھا کشن میں بھٹے میں کام کرنے والے مسیحی جوڑے کو توہینِ قرآن کے الزام میں سو سے زائد مشتعل افراد نے تشدد کے بعد بھٹی میں زندہ جلا دیا تھا۔سپریم کورٹ نے واقعے کے 18 روزبعد کوٹ رادھا کشن واقعے کا از خود نوٹس لیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں